Advertisements
Want create site? Find Free WordPress Themes and plugins.

پاکستان، کشمیر، حادثہتصویر کے کاپی رائٹ
AURENGZEB JARRAL

Image caption

جس وقت یہ حادثہ پیش آیا اُس وقت پل پر دو درجن سے زائد سیاح موجود تھے

پاکستان کے زیرِ انتظام کشمیر کی وادی نیلم میں ایک پل ٹوٹنے کے نتیجے میں نالے میں گرنے والے افراد میں سے سات کی لاشیں نکال لی گئی ہیں جبکہ آٹھ تاحال لاپتہ ہیں جن کی تلاش جاری ہے۔

مقامی انتظامیہ کے مطابق اتوار کو یہ حادثہ وادی نیلم کے علاقے کنڈل شاہی میں اُس وقت پیش آیا، جب سیاحوں کی بڑی تعداد جاگراں نالہ کو پیدل عبور کرنے والے پل پر چڑھ کر سلفیاں لے رہی تھی کہ اچانک پل ٹوٹ گیا۔

مری: چیئر لفٹ گرنے سے 10 افراد ہلاک

صحافی اورنگزیب جرال کا کہنا ہے کہ جس وقت یہ حادثہ پیش آیا اُس وقت پل پر دو درجن سے زائد سیاح موجود تھے جبکہ اس پیدل چلنے والے پل پر ایک وقت میں پانچ سے سات افراد تک ہی جا سکتے ہیں۔

انھوں نے بتایا کہ پل ٹوٹنے کی وجہ سے اُس پر موجود کئی سیاح نالے میں گر گئے اور اب تک پانی میں بہہ جانے والے افراد میں چھ کو زندہ بچا لیا گیا ہے جبکہ 15 افراد ابھی تک لاپتہ ہیں۔

تصویر کے کاپی رائٹ
AURENGZEB JARRAL

Image caption

حکام کے مطابق دریا میں پانی کے تیز بہاؤ کی وجہ سے لاپتہ ہونے والے طلبا کی تلاش کے کام میں مشکلات درپیش آ رہی ہیں

پاکستان کے زیرانتظام کشمیر کے وزیراعظم کے ترجمان راجہ وسیم کے مطابق اس واقعے میں ایک خاتون سمیت سات سیاح ہلاک جبکہ پانچ خواتین سمیت 11 سیاح زخمی ہو گے ہیں۔

زخمیوں میں سے سات کا تعلق فیصل آباد، تین کا ساہیوال میڈیکل کالج سے ہے جبکہ ایک مقامی دکاندار بھی زخمیوں میں شامل ہے۔ زخمیوں کو فوجی ہیلی کاپٹر کے ذریعے سی ایم ایچ مظفر آباد منتقل کیا گیا ہے جہاں ان کا علاج جاری ہے۔

ہلاک شدگان میں سے چھ کی لاشیں اتوار کو ہی تلاش کر لی گئیں جبکہ ایک لاش پیر کی صبح ملی ہے۔ پانی میں بہہ جانے والے آٹھ سیاح تاحال لاپتہ ہیں جن کی تلاش جاری ہے۔

ہلاک شدگان میں فیصل آباد سے تعلق رکھنے والے تین طلبا، اسلام سے تعلق رکھنے والا ایک جوڑا جبکہ ساہیوال سے تعلق رکھنے والی ایک طالبہ بھی شامل ہے۔

فیصل آباد کے ایک نجی کالج کے ڈائریکٹر جنید سبحانی نے بی بی سی کو بتایا کہ ان کے کالج کے 66 طالب علم اور عملے کے چار ارکان کشمیر گئے تھے، ان میں تین طالب علم ہلاک ہوئے ہیں اور دو لاپتہ ہیں جبکہ باقی محفوظ ہیں۔

تصویر کے کاپی رائٹ
AURENGZEB JARRAL

Image caption

حکام کے مطابق دریا میں پانی کے تیز بہاؤ کی وجہ سے لاپتہ ہونے والے طلبا کی تلاش کے کام میں مشکلات درپیش آ رہی ہیں

لاپتہ افراد میں فیصل آباد کے نجی کالج کے دو طلبا کے علاوہ ساہیوال میڈیکل کالج اور شریف میڈیکل کالج لاہور کی تین طالبات اور ایک طالبعلم کے علاوہ ایک سیاح خاتون اور ایک مقامی شخص شامل ہیں۔

ادھر پاکستان کے زیرِ انتظام کشمیر کی حکومت کی جانب سے اس واقعے سے متعلق معلومات کے حصول کے لیے مظفر آباد میں ایک کنٹرول روم قائم کر دیا گیا ہے۔

مقامی حکام کا کہنا ہے کہ حادثے کے بعد نالے میں ڈوب جانے والے افراد کی تلاش اور ریسکیو آپریشن جاری ہے جبکہ ڈپٹی کمشنر مظفرآباد اور دیگر حکام امدادی کاموں کی نگرانی کر رہے ہیں۔

حکام کے مطابق دریا میں پانی کے تیز بہاؤ کی وجہ سے لاپتہ ہونے والے طلبا کی تلاش کے کام میں مشکلات درپیش آ رہی ہیں۔

Did you find apk for android? You can find new Free Android Games and apps.
Advertisements
0 Comments

Leave a reply

©2018 Cyberian.pk

 
or

Log in with your credentials

or    

Forgot your details?

or

Create Account