پاکستان

ٹوئٹر پر جنگ: نواز شریف ’قوم کا بیٹا‘ یا ’سب سے زیادہ کرپٹ بیٹا‘

Want create site? Find Free WordPress Themes and plugins.

نواز شریف کے حامیتصویر کے کاپی رائٹ
Reuters

Image caption

نواز شریف کے حامیوں کی اب بھی ایک بڑی تعداد ہے اور وہ یہ سمجھتی ہے کہ سابق وزیرِ اعظم کا موقف درست ہے

پاکستان میں اس وقت جو ہیش ٹیگ سب سے زیادہ ٹرینڈ کر رہا ہے وہ #پاکستان_کا_بیٹا ہے۔

یہ ہیش ٹیگ نواز شریف کے بدھ کو احتساب عدالت میں ایون فیلڈ ریفرنس میں اپنا بیان مکمل کرانے کے بعد ٹوئٹر پر ٹرینڈ ہوا جس میں ان کا کہنا تھا کہ اُن کا جرم صرف وہی ہے جو اُنھوں نے 20 سال پہلے کیا تھا۔ ان کا اشارہ سابق آرمی چیف جنرل پرویز مشرف پر غداری کا مقدمہ درج کرانے کا فیصلہ تھا۔

سابق وزیر اعظم نے کہا کہ اُنھیں سپریم کورٹ کے ججز کی طرف سے سیسلین مافیا اور گارڈ فادر کہنے سے کوئی فرق نہیں پڑتا۔ ’میں پاکستان کا بیٹا ہوں اور اس مٹی کا ایک ایک ذرہ جان سے پیارا ہے اور اس بارے میں کسی سے حب الوطنی کا سرٹیفکیٹ لینا اپنی توہین سمجھتا ہوں۔‘

مزید پڑھیے

’بدعنوانی کے مقدمات مشرف کے خلاف مقدمے کی سزا ہیں‘

نواز شریف اور عدالتیں

مہر ستار اور نواز شریف

نواز شریف آخر چاہتے کیا ہیں؟

نواز شریف کے اپنے آپ کو پاکستان کا بیٹا کہنے پر ٹوئٹر پر بیٹا بیٹا ہو گئی اور ‘پاکستان کا بیٹا’ ہیش ٹیگ ٹرینڈ کرنے لگا۔ کچھ نے سابق وزیرِ اعظم کے موقف کو سراہا تو کچھ نے اس کو رد کر دیا۔ سبھی نواز شریف کو پاکستان کا بیٹا ماننے کے لیے تیار نہیں تھے۔

اپ کی ڈیوائس پر پلے بیک سپورٹ دستیاب نہیں

نواز شریف کی سیاسی زندگی کے نشیب و فراز

ایک ٹوئٹر صارف یاسر نے لکھا کہ جو آدمی ہر وقت جھوٹ بولتا ہے، جس کا پارلیمان میں بیان اور ہوتا ہے اور نیب عدالت میں اور۔ جو آدمی کہتا ہے کہ پاکستان کی ‘ایسٹیبلشمنٹ’ ممبئی حملوں میں ملوث تھی اگر ہم اب بھی اسے پاکستان کا بیٹا کہتے ہیں تو ہم ایک بیمار قوم ہیں۔ نواز شریف پاکستان کا بیٹا نہیں ہے۔

تاہم ایک اور صارف عدیل احمد خان اس سے اتفاق نہیں کرتے۔ ان کا خیال ہے کہ تاریخ رقم ہو رہی ہے۔ اور نواز شریف یہ تاریخ لکھ رہے ہیں۔

سجاد کو بھی نواز شریف کا بیان بہت پسند آیا۔ انھوں نے اپنے ٹوئٹر اکاؤنٹ پر لکھا نواز شریف نے سب کو بڑی بہادری سے بے نقاب کیا۔

انھوں نے لکھا کہ ہم سب پاکستان اور اس کی بہادر فوج سے پیار کرتے ہیں لیکن ہم آمروں سے نفرت کرتے ہیں اور ان کو سزائیں ملنی چاہیئں۔

سچا پاکی نامی صارف نے لکھا کہ پاکستان کا بیٹا کی بجائے پاکستان کا سب سے زیادہ کرپٹ بیٹا زیادہ بہتر ہوتا۔

ایک اور صارف بلال غوری لکھتے ہیں کہ بابا رحمتا تو ہے نہیں نوازشریف کی باتوں کا جواب کون دے گا ؟ آئی ایس پی آر یا پھر عمران خان جیسا کوئی خود ساختہ ترجمان؟

دیا ملک لکھتی ہیں کہ میاں نوازشریف نے کسی سیاسی جماعت کے خلاف پریس کانفرنس میں بات نہیں کی ہے لیکن جو بھی جوابی پریس کانفرنس کرنے آئیں گے.. جان جائیے گا وہ کس کے پالتو ہیں۔

خرم محمد سمجھتے ہیں کہ نواز شریف ایک بہادر شیر ہیں۔ وہ لکھتے ہیں کہ آج پتہ چلا کہ عمران ایمپائر کی انگلی کا انتظار کیوں کر رہا تھا۔ مگر نواز شریف نے سر جھکانے سے انکار کیا تھا۔ شیر شیر شیر شیر۔

اسی طرح عبداللہ کا خیال ہے کہ شیر چنگاڑ رہا ہے اور سب ڈر کے دبکے بیٹھے ہیں۔

Did you find apk for android? You can find new Free Android Games and apps.
Advertisements
Show More

Related Articles

Close
Close